11

روپیہ گرنے اور ڈالر بڑھنے کا اثر عوام پر آرہا ہے، شاہ محمود قریشی

ملتان: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مہنگائی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ روپیہ گرنے اور ڈالر بڑھنے کا اثر عوام پر آرہا ہے۔

ملتان میں میڈیا سے گفتگو میں شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی حکومت میں آئی تو پتا چلا کہ معیشت کی کیا حالت ہے، سوچنا ہوگا آئی ایم ایف کے پاس جانے کی نوبت کیوں آئی؟

انہوں نے کہا کہ مالیاتی خسارہ اتنا بڑھ گیا تھا کہ خطرے کی گھنٹیاں بجنا شروع ہوگئیں تھیں اور کوشش کے باوجود ہمیں آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا، (ن) لیگ کے دور میں تیل پر 56 فیصد جی ایس ٹی تھا لیکن ہم نے 17 فیصد کیا۔

ان کا کہنا ہے کہ ڈالر کو مصنوعی طور پر نیچے رکھ کر وقتی طور پر کام چلایا گیا، روپیہ گرنے اور ڈالر بڑھنے کا اثر عوام پر آرہا ہے، مشکل حالات ہیں اس میں کوئی شک نہیں۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ (ن) جنوبی پنجاب صوبہ نہیں چاہتی، وہ بہاولپور اور جنوبی پنجاب صوبہ میں عوام کو تقسیم کررہے ہیں، کل قومی اسمبلی میں جنوبی پنجاب صوبے کا بل پیش کریں گے اور اسپیکر سے درخواست کریں گے کہ رولز معطل کرکے جنوبی پنجاب صوبے کے بل پر بحث کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ کچھ قوتیں پاکستان میں استحکام اور سی پیک منصوبہ آگے بڑھتا دیکھنا نہیں چاہتیں، بھارت پاکستان پر الزام لگاتا ہے لیکن پاکستان غیر ذمہ دارانہ گفتگو نہیں کرنا چاہتا، پاکستان بلاتحقیق بات نہیں کرے گا، ٹھوس شواہد ہوں گے تو نشاندہی کریں گے۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ برطانوی دارالعوام اور عالمی اداروں کے مطابق مقبوضہ کشمیر کی صورتحال بھارت کے کنٹرول سے نکل رہی ہے، بھارت میں بی جے پی آئے یا کانگریس، دونوں میں انیس بیس کا فرق ہے، حالات ایسے ہیں کہ بھارت کو مذاکرات کی میز پر آنا ہی پڑے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ چین کے نائب صدر 26 مئی کو پاکستان آرہے ہیں، پاکستان کا چین کے ساتھ زراعت پر معاہدہ ہورہا ہے۔

وزیرخارجہ نے چینی شہریوں کی پاکستانی لڑکیوں سے شادی سے متعلق کہا کہ چینیوں کی پاکستان کی لڑکیوں سے شادیوں سے متعلق گمراہ کیا جا رہا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں