21

ورلڈکپ 1992 تا 2019: قومی ٹیم کی کِٹ کے مختلف انداز

کرکٹ کے عالمی میلے سے قبل جہاں ٹیمیں اپنی کارکردگی بہترکرنے کے لیے کوششیں کر رہی ہوتی ہیں وہیں شائیقین کو اپنی پسندیدہ ٹیم کی مخصوص کٹ دیکھنے کی بھی بے چینی ہوتی ہے اور ٹیم انتظامیہ بھی اس سلسلے میں کافی محنت کرتی ہیں۔

قومی ٹیم 1992 سے موجودہ ورلڈکپ تک کس طرح کی کِٹ میں میدان میں اتری اس حوالے سے قومی ٹیم کی رنگین جرسیوں کی تاریخ پر ایک نظر ڈالتے ہیں۔

1992 کرکٹ کا عالمی میلہ

کرکٹ میں پہلی مرتبہ رنگین کٹیں 1992 کے ورلڈکپ میں متعارف کروائی گئیں۔اُس سال کی کٹ پاکستانیوں کے لیے بہت یادگار ہے کیوں کہ یہ وہ یادگار سال تھا جب شاہینوں نے کرکٹ کے عالمی میدان میں ورلڈ چیمپئن کی ٹرافی اپنے نام کی تھی۔

قومی ٹیم کی یہ یادگار کٹ ہلکے سبز رنگ کی تھی جس کی شرٹ کے بازو پر لال،نیلے اور سفید رنگوں کی پٹیاں تھیں۔

1996 کا ورلڈکپ

فائل فوٹو

وسیم اکرم کی کپتانی میں قومی ٹیم اس مرتبہ صرف کوارٹر فائنل تک ہی رسائی حاصل کرسکی تھی۔

اس ٹورنامنٹ میں پاکستانی ٹیم کی وردی پہلے کی نسبت کچھ تیز سبز رنگ کی تھی جس کے بازووں پر ہلکے ہرے رنگ کی پٹی تھی اور شرٹ پر پہلی مرتبہ پاکستان کا نام تیز روشن تھا۔

1999 میں کرکٹ کی عالمی جنگ

پہلے کی نسبت سب سے الگ اور بہترین کٹ 1999 میں متعارف کروائی گئی۔ یہ وردی شوخ سبز رنگ کی تھی جس پر تیز ہرے رنگ کا ستارہ جگمگا رہا تھا اور اس پر قومی زبان میں پاکستان لکھا ہوا تھا۔

ورلڈکپ 2003 کی کِٹ

2003 کی ورلڈکپ کٹ میں نمایاں تبدیلی دیکھنے میں آئی تھی۔ ٹیم کی یونیفارم کو تیز ہرے رنگ میں رنگا گیا تھا اور کندھے پر پیلے رنگ کا پیچ تھا اور درمیان میں انگریزی میں پاکستان لکھا ہوا تھا جب کہ سینے پر پیلے رنگ کا ہی چھوٹا ستارہ بھی نمایاں تھا۔

2007 میں قومی ٹیم کی یونیفارم

یہ ورلڈکپ پاکستان کے لیے اچھا ثابت ناہوسکا اور قومی ٹیم گروپ مرحلے میں ہی باہر ہوگئی ۔اس مرتبہ کی کٹ 2003 کے ورلڈکپ کی کٹ سے مشابہت رکھتی تھی۔

اس کٹ کے لیے تیز ہرا رنگ منتخب کیا گیا جس میں ہلکے ہرے اور پیلے رنگ کی پٹیوں کی صورت میں ملاوٹ کی گئی تھی اور درمیان میں پاکستان کا نام واضح تھا۔

ورلڈکپ 2011 کا انداز

اس مرتبہ عالمی کرکٹ میلے کے لیے 2009 کی کٹ میں چاند اور ستارے کا اضافہ کیا گیا جو کہ تیز سبز رنگ کی تھی۔ یونیفارم کی ٹی شرٹ میں ہلکا ہرا اور سبز رنگ شامل کیا گیا تھا۔

ورلڈکپ 2015 کی کٹ کا اسٹائل

1992 کے ورلڈکپ سے ملتی جلتی کِٹ 2015 کے کرکٹ میلے کے لیے تیار کی گئی۔ یہ کٹ ہلکے ہرے رنگ کی تھی جس پر ماضی کی طرح چاند اور ستارہ نہیں تھا جب کہ سیدھی ہرے رنگ کی پٹیاں شامل کی گئیں۔

ورلڈکپ 2019 کی کِٹ

اس سال شاہین پھر سے تیز اور ہلکے ہرے رنگ کے باہمی مزاج سے تیار کردہ کٹ میں میدان میں جلوہ گرہورہے ہیں جس کے بائیں جانب ٹیم کا لوگو اور درمیان میں سفید رنگ میں لکھا پاکستان کا نام جگمگا رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں